610

لاچی میں لیشمینا نے وبائی مرض کی شکل اختیار کر لی

لاچی میں لیشمینا نے وبائی مرض کی شکل اختیار کر لی

پاکستان کے دیگر علاقوں کی طرح کوہاٹ کے تحصیل لاچی میں بھی لیشمینا نے وبائی مرض کی شکل اختیار کرنی شروع کردی ہے۔ لاچی اربن اور گردونواح دیہاتوں میں مرض پھیلنے کا انکشاف ہوا ہے۔ لاچی کے رہائشی اس وبائی مرض سے بچنے کے لیے ٹائپ ڈی ہسپتال لاچی کا رخ کرنے لگے ہیں۔ جہاں ویکسین اور ٹیسٹ کی سہولت ناپید ہیں جس کی وجہ سے عوام پرائیویٹ علاج کرانے کیلئے مجبور ہو گئے ہیں۔ لاچی کی عوام اپنے حلقہ کے ایم پی اے، ضلعی ناظم کوہاٹ اور DHO کوہاٹ سے اس معاملے کا نوٹس لینے کی اپیل کی ہے۔ واضح رہے کہ یہ بیماری چھوٹے بھورے رنگ کے  مچھر کے ڈنگ مارنے سے پھیلتی ہے۔ یہ بھورا مچھر دیکھنے میں  تو عام مچھروں کی طرح ہی لگتا ہے لیکن انسانی جلد میں اسکا زہر پھیلنے لگتا ہے۔ مچھر کا شکار بننے کے فوری بعد اسکے اثرات سامنے نہیں آتے بلکہ مچھر کے ڈنک مارنے اور دانہ نکلنے کے درمیان دو سے چار مہینے لگتے ہیں۔ ایک بار جب دانہ نمودار ہوجاتا ہے تو اس کا حجم بڑھنا شروع ہوجاتا ہے جس  کے سبب جلد مسلسل خشک ہوتی رہتی ہے اور اس پر کسی قسم کے مرہم ، لوشن یا  کریم کارگر ثابت نہیں ہوتے۔

شیئر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں