238

نئے داخلے کی اجازت نہ ملنے پر ہائر ایجوکیشن کے لحاظ سے کوہاٹ کا پہلا ادارہ بند ہونے کے قریب، سٹاف کو بغیر تنخواہ کے گھر بھیج دیا

نئے داخلے کی اجازت نہ ملنے پر ہائر ایجوکیشن کے لحاظ سے کوہاٹ کا پہلا ادارہ بند ہونے کے قریب، سٹاف کو بغیر تنخواہ کے گھر بھیج دیا

کوہاٹ کی سب سے پہلی پرائیویٹ یونیورسٹی پرسٹن یونیورسٹی جو کہ کم ازکم تیس سال سے زیادہ عرصے سے کوہاٹ کی عوام کو ہائر ایجوکیشن دے رہی تھی۔ ہائر ایجوکیشن کمیشن کے چیئرمین کی جانب سے چند کمیوں کی وجہ سے نئے داخلوں پر پابندی عائد کردی گئی تھی۔ جسکو اس سال پورے چار سال ہو جائیں گے۔ یونیورسٹی ذرائع کے مطابق ہائر ایجوکیشن کمیشن کو جن باتوں پر اعتراض تھا انکو چار سال کے طویل عرصے میں حل کر نے کی ہر ممکن کوشش کی گئی ہے۔ جسکا اعتراف ہائر ایجوکیشن کے فائنل وزٹ میں انکی نمائندہ کر چکی ہیں لیکن ہائر ایجوکیشن کمیشن نے اپنے رویے میں تبدیلی نہیں لائی اور نئے داخلوں کی اجازت نہیں دی۔ جسکی وجہ سے مینجمنٹ نے سٹاف کے اخراجات اٹھانے سے قاصر ہو کر تمام سٹاف کو بناء تنخواہوں کے تین ماہ کی چھٹی پر بھیج دیا ہے۔ جس سے نا صرف کئی گھروں کے چولہے ٹھنڈے پڑ گئے ہیں بلکہ کوہاٹ کی نوجوان نسل کو ہائر ایجوکیشن سے محروم رکھا جا رہا ہے۔ یونیورسٹی انتظامیہ اس معاملے میں کوہاٹ کی ان نامور سیاسی و سماجی شخصیات سے مدد کی اپیل کرتی ہے کہ اس مسئلہ کا حل نکالا جائے اور گورنر، وزیر اعلیٰ اور وزیراعظم تک ہماری رسائی کروانے میں مدد کی جائے۔ یونیورسٹی انتظامیہ اس بات کہ پریشان ہے کہ کوہاٹ سے ایک اعلیٰ سطحی ہائر ایجوکیشن کا ادارہ بند نہ ہو جائے۔

شیئر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں